ہم ترکی کو سرمایہ کاری، پیداوار اور ٹیکنالوجی کا مرکز بنا دیں گے، صدر ایردوان

0 232

ینگ بزنس مین کنفیڈریشن آف ترکی کے ایک وفد سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ ” ہم بین الاقوامی سرمایہ کاری کے ذریعے ترکی کو سرمایہ کاری، پیداوار اور ٹیکنالوجی کا مرکز بنا دیں گے، جس میں بنیادی توجہ ہائی ٹیک انڈسٹریز پر ہوگی۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے ینگ بزنس مین کنفیڈریشن آف ترکی (TUGIK) کے چیئرمین ارکان گورال اور ان کے ساتھی وفد سے وحید الدین مینشن استانبول میں ملاقات کی۔

"کسٹمز یونین معاہدے کو بہتر بنانے کے لیے کام جاری ہے”

TUGIK وفد سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے، برطانیہ کے ساتھ آزاد تجارت کے معاہدے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کسٹمز یونین معاہدے کے بعد یہ ترکی کی جانب سے کیا گیا سب سے اہم تجارتی معاہدہ تھا، "ہم نے یقینی بنایا کہ بریگزٹ کے بعد بھی اس معاہدے کے ذریعے برطانیہ کے ساتھ تجارتی تعلقات بدستور بڑھتے رہیں۔ یورپی یونین کے ساتھ کسٹمز یونین معاہدے کو اپگریڈ کرنے کا کام بھی جاری رہے گا۔”

ہمارا ہدف یہ یقینی بنانا ہے کہ ترکی وباء کے بعد کے زمانے میں ایک مضبوط، لچکدار اور مسابقت رکھنے والا عالمی کردار بنے، صدر ایردوان نے زور دیتے ہوئے کہا کہ ترکی کی جانب سے کووِڈ-19 وباء کے اثرات کے خاتمے کی کوششوں میں میکرو اکنامک اور مالیاتی میدانوں میں اٹھائے گئے اقدامات سے مدد ملے گی۔ "معیشت کے مضبوط پہلوؤں کو بہتر بناتے ہوئے ہم تمام تر احتیاط کے ساتھ مسائل کو حل کریں گے۔”

"ہم ترکی کو عالمی ویلیو چَین کا ایک اہم کردار بنائیں گے”

حالیہ چند مہینوں میں ترکی میں ہونے والی 15 ارب ڈالرز کی غیر ملکی پورٹ فولیو سرمایہ کاری کی جانب توجہ دلاتے ہوئے صدر ایردوان نے زور دیا کہ ترکی پر اعتماد رکھنے والے سرمایہ کار ویسے ہی کامیاب ہوتے رہیں گے، جیسے ہوتے آئے ہیں۔

استحکام اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے معاشی نمو اہمیت دیتے ہیں، یہ کہتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اس حوالے سے ہم نئے اقدامات کے ذریعے ترکی کو عالمی سپلائی چَین کا اہم حصہ بنائیں گے۔ ہم بین الاقوامی سرمایہ کاری کے ذریعے ترکی کو سرمایہ کاری، پیداوار اور ٹیکنالوجی کا مرکز بنا دیں گے، جس میں بنیادی توجہ ہائی ٹیک انڈسٹریز پر ہوگی۔”

صدر ایردوان نے اعادہ کیا کہ ایسا ماحول بنانے کے لیے تمام تر ضروری اقدامات اٹھائے جائیں گے کہ جس میں سرمایہ کاری کے لیے حالات مزید بہتر ہوں، یقینی کیفیت کو مزید بہتر بنایا جائے گا اور سرمایہ کاروں کی توقعات کو بھی کافی حد تک پورا کیا جائے گا۔

تبصرے
Loading...