اگر شہری رضاکارانہ طور پر قرنطینہ میں رہیں تو ہمیں اضافی اقدامات اٹھانے کی ضرورت نہیں پڑے گی، صدر ایردوان

0 761

آق پارٹی کے صوبائی سربراہان سے بذریعہ وڈیو کانفرنس خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اگر شہری رضاکارانہ طور پر قرنطینہ میں رہیں تو ہمیں اضافی اقدامات اٹھانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ لیکن اگر گھر پر رہنے، سماجی فاصلہ برقرار رکھنے اور صحتِ عامہ کے اصولوں کی پیروی کرنے جیسے اقدامات پر عمل درآمد نہیں کیا گیا اور اس سے وبا مزید پھیلی تو حکومت کو سخت اقدامات اٹھانے پڑیں گے۔”

صدر مملکت اور انصاف و ترقی (آق) پارٹی کے چیئرمین رجب طیب ایردوان نے پارٹی کے صوبائی سربراہان سے بذریعہ وڈیو کانفرنس خطاب کیا۔

"ترکی کا صحت کا مضبوط ڈھانچہ اس کی سب سے بڑی برتری ہے”

کروناوائرس کی وباء میں جان دینے والے افراد کے لیے اللہ سے مغفرت کی دعا اوران کے لواحقین سے تعزیت کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ COVID-19 کے خللاف جنگ میں ترکی کی سب سے بڑی برتری اس کا صحت کا مضبوط ڈھانچہ ہے اور اس نے اس وبائی مرض کے ابتدائی مرحلے میں ہی اس کے خلاف اقدامات اٹھائے۔ دنیا بھر میں کئی ممالک کو درپیش مسائل کی جانب اشارہ کرتے ہوئے صدر ایردوان نے زور دیا کہ ترکی کو ایسے مسائل سے بچانے کے لیے ضروری اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔

کروناوائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے اقدامات کے عملی نفاذ کی کڑی نگرانی اور کسی بھی غفلت یا خلاف ورزی پر سخت کارروائی کا اشارہ دیتے ہوئے صدر ایرودان نے کہا کہ بنیادی ہدف ترکی کو ان حالات سے باہر نکالنا ہے، کم از کم نقصان کے ساتھ۔

شہریوں سے گھروں پر رہنے اور سماجی میل جول کو کم سے کم رکھنے کا مطالبہ کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اگر شہری رضاکارانہ طور پر قرنطینہ میں رہیں تو ہمیں اضافی اقدامات اٹھانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ لیکن اگر گھر پر رہنے، سماجی فاصلہ برقرار رکھنے اور صحتِ عامہ کے اصولوں کی پیروی کرنے جیسے اقدامات پر عمل درآمد نہیں کیا گیا اور اس سے وبا مزید پھیلی تو حکومت کو سخت اقدامات اٹھانے پڑیں گے۔”

تبصرے
Loading...