مغرب کے دفاع اور فلاح کی دیواریں مہاجروں اور مسلمانوں سے نہیں اپنے شہریوں سے لرز رہی ہیں، ایردوان

0 1,468

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے استنبول کے ڈسٹرکٹ اوسکودار میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے، "وہ جنہوں نے اپنی سیاسی مقبولیت کی خاطر یورپ میں مہاجر مخالف اور مسلمانوں سے نفرت کے جذبات ابھارے، آج اپنے ہی دام میں پھنس چکے ہیں۔ آج مغرب کے دفاع اور فلاح کی دیواریں مہاجروں اور مسلمانوں سے نہیں اپنے شہریوں سے لرز رہی ہیں”۔

صدر ایردوان نے کہا، "ہم کبھی بھی حقوق کے حصول کے لیے تشدد کی حمایت نہیں کر سکتے اور نہ ہم کبھی ایسا کریں گے۔ ہر طرح کے مطالبے اور خیالات جمہوریت کے اندر رہتے ہوئے ہی اٹھائے اور لڑے جانے چاہیں۔ اس حوالے سے ہم یورپ کی سڑکوں کے مناظر دیکھ رہے ہیں”۔

انہوں نے مزید کہا، "میں ایک بار پھر کہہ دوں کہ ہم نہ صرف مظاہرین کی جانب سے انتشار کی مخالفت کرتے ہیں بلکہ ان کے خلاف غیر ضروری طاقت کے استعمال کی بھی مخالفت کرتے ہیں۔ تاہم حالات بتا رہے ہیں کہ یورپ جمہوریت، انسانی حقوق اور آزادیوں میں ناکام ہو چکا ہے۔ وہ جنہوں نے اپنی سیاسی مقبولیت کی خاطر یورپ میں مہاجر مخالف اور مسلمانوں سے نفرت کے جذبات ابھارے، آج اپنے ہی دام میں پھنس چکے ہیں”۔

ترک صدر ایردوان نے کہا کہ "آج مغرب کے دفاع اور فلاح کی دیواریں مہاجروں اور مسلمانوں سے نہیں اپنے شہریوں سے لرز رہی ہیں”۔ اور انہوں نے یاد دلایا کہ "ہم نے سالوں ان کو خبردار کیا کہ وہ علیحدگی پسند دہشتگرد تنظیموں کی حمایت نہ کریں۔ اب وہ حامی اس انتشار کو پیدا کرنے والے چکے ہیں۔ ‘پی کے کے’ کے حلقے وہاں موجود ہیں، ‘ڈی ایچ پی کے سی’ وہاں موجود ہے۔ ہم نے انہیں کہا تھا کہ دہشتگردی ایک سانپ کی طرح ہے جو ایک دن تمہیں ہی ڈس لے گی۔ ہم اس واقعے پر خوش نہیں ہیں لیکن سچائی یہی ہے”۔

تبصرے
Loading...