سربرنیکا کے قتل عام میں بچہ اپنی ماں سے کیا کہتا ہے؟، بزبان ِ ایردوان

0 1,550

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے عالمی یوم نسواں کے موقع پر خطاب کے دوران کہا کہ سربرنیکا کے قتل عام کے دوران بچہ اپنی ماں سے کیا کہتا ہے "یہ بچوں کو گولیوں سے مار دیتے ہیں امی”۔ لیکن اس ماں اور بچے پر گزرنے والے احساسات پر حقوق نسواں پر آسمان سر پر اٹھائے رکھنے والے خاموش رہے۔


مکمل وڈیو یہاں دیکھیں

اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے کہ ترکی آج خواتین کے حقوق اور دیگر موضوعات پر اپنے کردار کو آگے بڑھ کر پیش کر رہا ہے، ایردوان نے کہا، "کیا آپ نے کبھی ان لوگوں کو سنا جو خواتین کے حقوق پر آسمان سر پر اٹھائے رکھتے ہیں، انہوں نے گزشتہ چند مہینوں میں مشرقی غوطہ میں سینکڑوں خواتین کی ہلاکت پر بات کی ہو؟۔ عورتوں کے حقوق کے الفاظ جو وہ بولتے ہیں ان کا کیا مطلب ہوگا اگر وہ ایک لاکھ لوگوں کی بدترین قتل عام  کے مجرم کے خلاف بات نہیں کرتے جن میں زیادہ تعداد خواتین اور بچوں کی ہے”۔

صدر ایردوان نے زور دیا کہ، "زمین پر وہ کس طرح رہتے ہیں جو اپنے ہاتھوں کو ان خواتین تک نہیں بڑھاتے جو جو کیمپوں میں غیر انسانی حالات میں رہ رہی ہیں۔ جن کیمپوں میں انہوں نے میانمار کے ظلم و ستم خود کو پچانے کے لیے پناہ لی ہے۔ کیا ان خواتین کے حقوق نہیں ہوتے؟کیا ان عورتوں کے لیے عورتوں کے حقوق کی پکار نہیں دی جا سکتی جو پچھلی صدی میں بلقان، کاکاشاش اور ترکستان میں ہونے والی مصیبتوں کا شکار رہیں، کیا یہ جھوٹ ہے؟”۔

تبصرے
Loading...