میں پوچھتا ہوں، آخر تم ایسا کیوں نہیں کہہ رہے؟: ترک صدر کا مغرب سے سوال

0 996

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے ازمیر میں انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ "دنیا کے دوسرے کونے میں ایک قاتل نے ان مسلمانوں کو قتل کیا ہے جو نمازِ جمعہ کے لیے اکھٹے ہوئے تھے۔ اس نے جو اسلحہ قتل کے لیے استعمال کیا اس پر میرے ملک اور میرے ملت کو ہدف بنانے والی علامتیں تحریر تھیں”۔

رجب طیب ایردوان کی زبان میں اردو ترجمہ کے ساتھ سنیے:

انہوں نے کہا کہ "اس شخص کے قتل عام پر عالمی تنظیمیں، خصوصاً اقوام متحدہ، عالمی رہنما اسے اسلام اور مسلمانوں پر حملہ قرار دے رہے ہیں۔ تاہم یہ جو حقیقت میں ہے وہ نہیں کہہ رہے۔ وہ نہیں کہہ رہے کہ "یہ ایک مسیحی دہشت گرد ہے”۔ لیکن اگر یہ حملہ ایک مسلمان کرتا تو کیا کہہ رہے ہوتے؟ اس وقت کہہ رہے ہوتے کہ یہ ایک "اسلامی دہشتگرد” ہے۔ دیکھو یہ بہت اہم نقطہ ہے۔ میں یہاں ازمیر میں کھڑے ہو کر مغرب سے پوچھتا ہوں کہ وہ ایسا کیوں نہیں کہہ رہے ہیں؟”۔

تبصرے
Loading...