سردیوں میں استنبول کی سیاحت کی اہم وجوہات

0 403

استنبول میں سخت سردیاں پڑتی ہیں لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ یہ اس خوبصورت شہرکو دیکھنے کا بہترین وقت نہیں ہے۔


آئیے آپ کو سردیوں میں استنبول دیکھے کی چند وجوہات بتاتے ہیں۔


سردیوں کے مہینوں میں شہر میں سیاحوں کا رش زیادہ نہیں ہوتا اس لیے باسلیقی حوض (Basilica Cistern) جیسے ان مقامات کو تنہا دیکھنے کا بھی موقع بھی مل جاتا ہے کہ جہاں عموماً بہت بہت بھیڑ بھاڑ ہوتی ہے۔


اِس جگہ کی پراسراریت اور سحر انگیز فطرت کو سمجھنے کا موقع تنہائی میں زیادہ بہتر انداز میں ملتا ہے ورنہ سیاحوں کی بھیڑ میں پھنس کر اندازہ نہیں ہوتا۔


استنبول میں کافی سردی پڑتی ہے اور اگر کسی دن بارش بھی ہو جائے تو اُس روز گرم حمام سے بہتر کچھ نہیں۔


یہاں مالش کروائیں، گرم پانی سے نہائیں، گرم پتھر پر آرام کریں، کسی تاریخی حمام میں گزارے گئے چند گھنٹے بھی آپ کے جسم ہی نہیں بلکہ روح کو بھی گرما دیں گے۔


استنبول کی سردیوں کی خاص بات ہوتی ہے کہ یہ بہت خوبصورت ہوتی ہیں۔


شہر کے تاریخی جزیرہ نما میں ہر جگہ برف ہی برف نظر آتی ہے اور آیاصوفیا، نیلی مسجد اور تمام تاریخی عمارات کو سفید برف سے ڈھکا ہوا دیکھنا ایک دلکش نظارہ ہوتا ہے۔


سردیوں کے مہینوں میں بھی استنبول کی فیری کا سفر شہر کے بہترین تجربات میں سے ایک ہے۔


آبنائے باسفورس کو پارکرتے ہوئے ترک چائے کا لطف سرد موسم کی وجہ سے دوبارہ ہو جاتا ہے۔


استنبول شاید دنیا کا واحد شہر ہوگا کہ جہاں شاہ بلوط پر لگنے والا پھل بھون کر جا بجا فروخت کیا جاتا ہے۔


گرما گرم خریدیں اور کھا کر آپ کو اندازہ ہوگا کہ یہ کتنے مزے کا ہوتا ہے۔ سردیوں کے مہینوں میں اس سے آپ کو گرماہٹ بھی ملے گی۔


بوزا خمیری دودھ سے بنایا جانے والا ایک روایتی ترک مشروب ہے۔


یہ اب بھی روایتی انداز ہی میں فروخت کیا جاتا ہے اور بوزا فروخت کرنے والے سڑکوں پر عام طور پر گھومتے نظر آتے ہیں۔


یہ روایت بھی دنیا میں شاید ہی نظر آتی ہے۔ ویسے بوزا کا ذائقہ بہت عمدہ ہوتا ہے، یہ صحت بخش بھی ہے اور سردیوں کے موسم میں گرمائش بھی دیتا ہے۔

تبصرے
Loading...