سات ترک خواتین نے خشک میوہ جات اور سبزیوں کی برانڈ ‘ایزو’ بنا کر برآمدات شروع کردیں

0 2,150

ہم نے کارباری شعبے میں کئی سکسیس اسٹوریز سنی ہوں گی، ایسی ہی ایک کہانی سات ترک خواتین کی ہے جنہوں نے مل کر خشک میوہ جاتے اور سبزیوں کی ایک برانڈ ‘ایزو’ نام سے بنائی اور اپنی پروڈکٹس دنیا بھر میں بیچنا شروع کر دی ہیں۔ ان ترک خواتین نے غازی انتیب شہر کے علاقہ اوزیلی میں قائم زرعی اسکول سے تعلیم حاصل کی اور انہیں اس دوران ترک وزارت صنعت و ٹیکنالوجی سے منسلک ایپیک یولو ڈویلپمنٹ ایجنسی (İKA) کے ڈویلپمنٹ اسپورٹ پروگرام کا تعاون بھی حاصل تھا۔ اس اسکول میں انہیں میوہ جات اور سبزیوں کو خشک کرنے کی تیکنیک سکھائیں گئیں۔

ایپیک یولو ڈویلپمنٹ ایجنسی (İKA) کے تحریری بیان کے مطابق ان خواتین نے ایزوگیلن کوآپریٹ کے نام سے ادارہ قائم کیا جس میں "ایزو” نام سے پروڈکٹس بنائی جا رہی ہیں۔ میوہ جات اور سبزیوں کی غذائیت میں کمی لائے بغیر انہیں خشک کیا جاتا ہے اور معیاری پیکنگ کے ذریعے دنیا بھر میں برآمد کیا جا رہا ہے۔

ایکا کے سیکرٹری جنرل برہان آک یلماز جن تشخیصی آرا بھی بیان کا حصہ ہیں اس میں کہا ہے کہ 600 کلو گرام سبزیاں اور پھل روزانہ کی بنیاد پر فریزنگ ڈرائی کی جاتے ہیں اور حاصل ہونے والی پروڈکٹ کی غذائیت 97 فیصد برقرار رکھی جاتی ہے جو اپنی خوشبو، ذائقہ اور غذائیت میں اصل سبزیوں اور پھلوں جیسے ہی ہوتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ان سبزیوں اور پھلوں کو محفوظ کرتے ہوئے کسی قسم کے اضافی مادے فیڈ ایڈیٹو یا پرزرویٹو استعمال نہیں کیے جاتے ہیں۔ فریز ڈرائنگ ٹیکنالوجی کی مدد سے غازی انتیب کا اصل ذائقہ پوری دنیا میں پہنچ رہا ہے۔

آک یلماز کے مطابق سبزیوں اور پھلوں کو فریز ڈرائنگ کرنے کی ٹیکنالوجی تیزی سے پھیل رہی ہے۔ اور اس قسم کے پھل ناشتے کے سیرلز، گرینالوز، انسٹینٹ سیرپ اور دیگر کھانوں میں استعمال کئے جاتے ہیں اس کے علاوہ انہیں کافی، چائے، مشروبات میں بھی استعمال کیا جاتا ہے جن میں ان کا اصل ذائقہ اور رنگ آتا ہے۔

ایکا نے اس منصوبہ پر 1.4 ملین لیرا خرچ کیا ہے اور اس پروگرام سے نہ صرف ترک خواتین بلکہ شامی خواتین نے بھی فائدہ اٹھایا ہے۔ ان سات خواتین نے مل کر خشک میوہ جاتے اور سبزیوں کی ایک برانڈ ‘ایزو’ نام سے بنائی اور اپنی پروڈکٹس ترکی سمیت دنیا بھر میں بیچنا شروع کر دی ہیں۔ ان کی کمپنی 45 مختلف قسم کی پروڈکٹ بنا رہی ہے جن میں ٹماٹر، مرچ، اچار اور جام شامل ہیں۔ انہوں نے یورپی ممالک خصوصاً جرمنی میں مجموعی طور پر 6 لاکھ لیرا کی برآمدات کی ہیں۔ کمپنی اپنے نئے اہداف میں دنیا کے تمام ممالک تک اپنی برآمدات بڑھانا چاہتی ہے۔

 

تبصرے
Loading...